Radicalisation – Explained in Urdu for parents

What is radicalisation and extremism?

Radicalisation and extremism is when someone:

  • believes and supports extremist and violent views
  • carries out acts of violence against others for political reasons.
  • Someone can be influenced, groomed or pressured by extremists to carry out an act of violence against the people, places or organisations

Extremists find a vulnerable person and seek to change their behaviour and beliefs.

The vulnerable person can be groomed or influenced online by political violent extremist using social media

A vulnerable person can be radicalised if they feel:

  • Isolated, lonely and wanting to belong
  • ashamed or judged about their culture, gender, religion or race
  • stressed or depressed
  • fed up of being bullied by other people
  • angry at other people, society or the government
  • believe they are supporting people who are being oppressed
  • sexual, religious or racial violence is acceptable

Extreme views can lead to harmful and illegal acts such as violence, attacks, discrimination or hate

If you’re worried, you can talk to someone.

  • Ask an adult for help
  • Talk to a counsellor in confidence
  • Or write to SAM at Childnet

 

 

Radicalisation – Explained in Urdu for parents

انتہا پسندی اور بنیاد پرستی کیا ہے؟

بنیاد پرستی اور انتہا پسندی تب ہوتی ہے جب کو ئی:

انتہا پسندی اور تشدد کے خیالات پر یقین رکھتا ہے اور حمایت کرتا ہے

 

سیاسی وجوہات کی وجہ سے دوسروں کے خلاف  پرتشدد کام سرانجام دیتا ہے۔

انتہا پسندوں کی طرف سے کسی کو متاثر، تیار یامجبور کیا جا سکتا ہے تا کہ وہ  لوگوں، جگہوں یا تنظمیو ں کے خلاف تشدد کا عمل انجام دے سکے.

انتہاپسند ایک کمزور شخص تلاش کرتے ہیں اور ان کے رویے اور عقائد کو تبدیل کرنا چاہتے ہیں.

کمزور شخص سیاسی پر تشدد انتہا پسندوں   کے ذریعے سے  آن لائن سوشل میڈیا کا استعمال کرتے ہوئے  سکھایا  جا سکتا یا متاثر ہو سکتا ہے.

ایک کمزور شخص بنیاد پرستی کا باعث بن سکتا ہے اگر وہ ایسے محسوس کرے تو:

الگ الگ، تنہا اورتعلق قائم کرنے کی خواہش رکھنے والا ہو

اپنی ثقافت، جنس، مذہب یا نسل کے بارے میں شرمندہ ہو.

پریشان یا اداس ہو۔

دوسرے لوگوں کی طرف سے تنگ کیے جانے کی وجہ سے  بیذار ہو گیا ہو۔

دوسرے لوگوں، سماج یا حکومت سے ناراض ہو۔

اس بات پر یقین رکھتا ہو کہ وہ مظلوم لوگوں کی  حمایت کر رہا  ہے۔

اس بات پر یقین رکھتا ہو کہ جنسی، مذہبی یا نسلی تشدد قابل قبول ہو تاہے

انتہاپسندنظریات نقصان دہ اور غیر قانونی اعمال  کا  باعث بن سکتے ہیں جیسے کہ تشدد، حملے، امتیازی سلوک یا نفرت ۔

اگر آپ فکر مند ہیں تو آپ کسی سے بات کرسکتے ہیں.

مدد کے لئے ایک بالغ سے مد د لیں

مشیرکو اعتماد میں لیکراس سے بات کریں

یا چائلڈ نیٹ پر سام  کو لکھ کر آگاہ کریں۔

 

Share This Post:
Facebooktwitterpinterestlinkedintumblr

About the author: admin